حمد باری تعالیٰ

اشتہارات

یوٹیوب چینل

تلاش کریں

پتے کاپتا لگائیے! :مریم وزیر

.
پتے کا پتہ جب چلا جب وہ جانے والا تھا! اور زیادہ اچھی طرح اب چل رہا ہے جب کہ وہ چلا گیا ہے.

تو جناب جب پتے میں پتھری کا معلوم ہوا تو یہ تو اندازہ ہوگیا کہ ہر پتھر قیمتی ہوتا ہے، اتنا کہ اپنی قدر و قیمت کا تعین کروا کر ہی دم لیتا ہے.مگر یہاں دور کے ڈھول سہانے والا معاملہ ہوا. خیر ان پتھروں کو بھی نکال باہر کیا گیا، مگر آہ بے کار تھے، بس نکل گئے یہی اچھا ہوا!

اب چونکہ پتے اور اس کے پتھروں کا ذکر ہو رہا ہے تو کیوں نا وجوہات، عوامل وغیرہ وغیرہ سب بتاتے چلیں اور ساتھ میں یہ بھی کہ پتہ ہے کیا؟ کام کیا کرتا ہے؟ ہمارے جسم میں ہوتا کہاں ہے؟ اور اگر اس میں کچھ قیمتی پتھر جمع ہو جائیں تو انہیں نکال باہر کرنے کے لیے کیا تدابیر اختیار کرنی چاہیے یا کرنی پڑتی ہیں؟ اور ان پتھروں کے نکلنے کے بعد کیا کریں؟

پتہ ہمارے پیٹ میں موجود ہوتا ہے، اور پیٹ کے دیگر کارندوں (یعنی أعضاء) سے کافی چھوٹا سا ہوتا ہے. لوبیا کی شکل کا، ایک ہاتھ کے ناپ کا گوشت کا ٹکڑا کہہ لیں تو یہ بھی ٹھیک ہے.

کام کیا کرتا ہے پتہ؟ تو بقول علامہ اقبال

یوں تو چھوٹی ہے ذات بکری کی

دل کو لگتی ہے بات بکری کی.

مگر پتے کے لیے کہا جائے گا تو یوں مناسب رہے گا :

یوں تو چھوٹی ہے ذات پِتے کی

دل پہ لگتی ہے بات پَتے کی.

ہمارا پتہ بھی بڑےےےے کام کرتا ہے. تیل میں تلی ہوئی چیز ہو، یا تیل میں ڈوبے ہوئے کھانے ،یا تیز مرچ مصالحوں پر مشتمل چٹخارے دار، مزےدار کھانے ہوں، ان سب کو پتہ قابل قبول بنا کر پیٹ کے دیگر اعضاء تک کھانے کو پہنچاتا ہے. یعنی کھانے سے چکنائی و دیگر نقصان دہ لوازمات کو علیحدہ کرتا ہے.

پتہ ہوتا کہاں ہے؟ تو جی یہ ہمارے جسم میں پیٹ میں، معدے میں، سیدھے ہاتھ کی طرف آخری پسلی کے بالکل قریب موجود ہوتا ہے.

پتھر، پتھری کیا ہوتی ہے؟ چکنائی سے بھرپور کھانوں، چٹ پٹی چاٹ اور خوب مرچوں والی نہاری اور دیگر وجوہات کی وجہ سے پتے میں اپنے کام کے دوران جو کچھ چھوٹے چھوٹے یا بڑے ذرات، ذخائر یا دیگر مادے ایک جگہ یا جگہ جگہ آپس میں جڑ جاتے ہیں اور پتھر کی صورت اختیار کرلیتے ہیں ، پتھر یا پتھری کہلاتے ہیں .

ویسے تو پتے میں پھتری کی بہت سی وجوہات ہیں جن میں کچھ تو عمومی طور پر بہت سے لوگ جانتے ہیں جن میں

بازار کے کھانوں کا بہت زیادہ استعمال کرنا،

تیل، تیز مرچ مصالحوں پر مشتمل کھانے کھانا، وزن تیزی سے بڑھنا، اسی طرح تیزی سے کم کرنا، ہونا، آلودگی، آلودہ پانی کا استعمال کرنا.والدین میں سے کسی کو پتے میں پھتری ہونا بھی شامل ہے .

ورزش کا زندگی کے معمولات میں شامل نہ ہونا بھی پتے میں پتھری کی وجوہات میں سے ایک وجہ ہوسکتی ہے.

یہ تو وہ ہوئیں وہ باتیں جن کی وجہ سے کسی کے بھی پتے میں پتھری ہوسکتی ہے.اب اگر اوپر موجود کسی بھی کام کے کرنے یا ہونے کی وجہ سے پتے میں پتھری ہوگئی ہے تو کس طرح سے معلوم ہوگا؟ بھئی خوب تیل والا کھانا کھانے کے تھوڑی دیر بعد یا کچھ گھنٹوں بعد معدے کے سیدھی طرف یا بالکل بیج میں جو شدید درد، بہت تکلیف ہوگی، الٹیاں، بد ہضمی کی طرح محسوس ہوگا اس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ پتے کا پتا لگانے کا وقت آگیا ہے. تکلیف ہر دفعہ خوب چکنائی والے کھانے کے بعد بھی ہوسکتی ہے. اور اگر دو تین دفعہ سے زیادہ ایسا ہو تو فوراً اپنے ڈاکٹر سے رجوع کریں. الٹراساؤنٹ کے ذریعے اس کی تصدیق ہوجاتی ہے.

اب اگر پتھر کم ہیں، معمولی نوعیت کی پتھری ہے تو اس صورت میں سادہ خوراک سے مدد لی جاسکتی ہے. اس کے لیے کچھ ٹوٹکے تو ہوتے ہیں، مگر زیادہ بہتر سادہ غذا کا استعمال ہے. جب تک پتھری پتے کے اندر اور کم مقدار میں ہوتی ہے جب تک کا یہ علاج ہے.

مگر جب پتھر اس کی نالی میں ہو جائیں تو اس کا حل آپریشن ہے. اور سائز میں بڑے ہوں تو کیا کریں؟ اس کا علاج کیا ہوسکتا ہے؟ اس کا واحد حل ڈاکٹر صاحبان اس کو غائب کرنے کا بتاتے ہیں، جی تو اس کو نکال باہر کرنا اس کا واحد حل رہ جاتا ہے. آپریشن کے ذریعے اس کو نکالا جاتا ہے. پیٹ میں چار جگہ معمولی سے سوراخ کرکے اس کو نکال لیا جاتا ہے.

لیں جی اب اگر کوئی پتے کا صفایا کروا کر آیا ہے تو کچھ ہفتے آرام کرلے. وزن نہ اٹھائے، قبض نہ ہونے پائے، کھانسی سے بھی دور رہے کہ آپریشن کے بعد کچھ احتیاطی تدابیر تو اختیار کرنی ہوتی ہیں نا. کم مرچ اور تیل والے کھانے کھانے ہوتے ہیں. یہ سب تقریباً تین مہینے تک تو کر ہی لیجیے. پھر بعد میں بھی چکنائی والے کھانے سے تھوڑا دور دور رہیں تو بہتر ہے.

جاتے جاتے آج کی بات، پیارے نبی کریم صل الله عليه وسلم کے بتائے ہوئے کھانے پینے کے آداب پتا ہوں اور ان پر عمل پیرا بھی ہوں تو نہ صرف پتے کا پتہ رہے گا بلکہ دیگر بہت سی تکلیفوں سےبھی محفوظ رہیں گے.

فیس بک تبصرے